چین میں مسجد کے انہدام کے فیصلے کے خلاف مسلمان سراپا احتجاج

چین میں قائم ایک قدیم مسجد کو انہدام کرنے کے حکومتی فیصلے کے خلاف سینکڑوں مسلمان سراپا احتجاج ہیں۔

تفصیلات کے مطابق چین کے شہر وائی ژو میں قائم ایک مسجد کو مسمار کرنے کے مجوزہ حکومتی منصوبے کے خلاف سینکڑوں مسلمان احتجاج کر رہے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سینکڑوں مسلمانوں نے ایک مسجد کے باہر دھرنا دے رکھا ہے، یہ مسلمان اس مسجد کے انہدام کے حکومتی منصوبے کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں، جن کا مقصد مسجد کی حفاظت کرنا ہے۔

چینی حکام کی جانب سے رواں ماہ تین اگست کو مسجد گرانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے، جبکہ قوی امکان ہے کہ مسجد کو جلد ڈھا دیا جائے گا۔

حکام نے موقف اختیار کیا ہے کہ مذکورہ مسجد کی تعمیر کے وقت باضابطہ کوئی اجازت نامہ نہیں لیا گیا، جبکہ مسجد کو گرانے سے متعلق مسجد کی کمیٹی کو آگاہ کر دیا گیا ہے۔

یہودی شرپسندوں نے مقبوضہ فلسطین میں ایک مسجد شہید کر دی

دوسری جانب مسجد کے باہر سینکڑوں مظاہرین موجود ہیں جو حکومتی فیصلے کے خلاف آواز بلند کر رہے ہیں، مسلمانوں میں شدید غم وغصہ بھی پایا جاتا ہے۔

علاوہ ازیں یہ بھی خیال ظاہر کیا جارہا ہے کہ مسجد انتظامیہ اور حکام کے درمیان مذاکرات بھی کیے جارہے ہیں تاکہ مفاہمت کے ذریعے حکومت کو اس فیصلے سے روکا جائے۔

خیال رہے کہ وائی ژُو شہر کے قریبی دیہات کے مسلمانوں میں سخت غم و غصہ پایا جاتا ہے اور سینکڑوں مسلمان آج جمعہ دس اگست کی صبح سے وائی ژُو میں جمع ہیں۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں