ہمارے ملک کے حکمرانوں پرابھی بہت کام کیا جانا ہے، وزیراعظم

قومی اسبملی میں اپوزیشن جماعتوں کی وزیراعظم عمران خان کی طویل عرصے سے غیر حاضری اور سوشل میڈیا کے ذریعے کام کرنے پر مسلسل تنقید کے بعد وزیر اعظم عمران خان نے گزشتہ روز اپوزیشن جماعتوں پر اپنے اکاؤنٹ سے ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) معاملے پر دوبارہ تنقید کی۔

ہمارے ملک کے حکمرانوں پرابھی بہت کام کیا جانا ہے، وزیراعظم

تسنیم خبررساں ادارے کے مطابق، وزیراعظم عمران خان  نے اپنے ٹویٹس میں کہا کہ ہماری زمین کی خوبصورتی اور وسعت انتہائی شاندار ہے پر افسوس کے اس خوبصوتی کی ہمارے حکمراں قدر نہیں کرتے جس کی وجہ سے ای سی ایل ان کے لیے ایک مصیبت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارے پرکشش ملک میں رہنا اور لوگوں کے لیے کام کرنا میں پسند کرتا ہوں۔

وزیر اعظم نے اپنے ٹویٹ کے ساتھ ایک ویڈیو بھی ڈالی جس میں برف سے ڈھکے پہاڑ اور شمالی علاقہ جات کے جنگلی جانور بھی دکھائے دیے۔

اس ویڈیو کلپ کو غیر ملکی ڈاکومینٹریز سے لیا گیا تھا۔

ایک اور ٹویٹ میں عمران خان نے پاکستان پیپلز پارٹی پر تنقید کی اور کہا کہ وفاقی کابینہ نے بلاول بھوٹو زرداری اور وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارے چند قانون ساز ای سی ایل سے اتنا کیوں ڈرتے ہیں؟ وہ بیرون ملک جانے کے لیے اتنا کیوں بے چین ہیں، پاکستان اور اس کے سیاستدانوں کے لیے بہت کام کیا جانا باقی ہے، وہ زمین جس سے وہ محبت کا دعویٰ کرتے ہیں پر بیرون ممالک جانے کے لیے انتظار نہیں کرپاتے، اور چند قانون سازوں کے پاس بیرون ممالک کے

ایک اور ٹویٹ میں وزیر اعظم نے کہا کہ کیا کوئی مجھے اس وجیب منطق کو ان افراد کو سمجھا سکتا ہے جو پاکستان میں رہنا اور کام کرنا پسند کرتے ہیں کیونکہ ہم پاکستان سے محبت کرتے ہیں۔

وزیر اعظم کی ٹویٹ کے چند گھنٹوں بعد بلاول بھٹو زرداری نے قومی اسمبلی میں کہا کہ وہ وزیر اعظم کے سامنے جواب دینا چاہتے ہیں تاہم عمران خان میں پارلیمنٹ آنے کی ہمت نہیں۔

پیپلز پارٹی کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ انہیں پرواہ نہیں کہ ان کا نام ای سی ایل میں ہو یا نہیں، آزادانہ نقل و حرکت ان کا بنیادی حق ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جمہوری حکومتوں کو عوام کے بنیادی حقوق کا تحفظ کرنا چاہیے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری