یورپی یونین مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کروائے، علی رضا سید

چیئرمین کشمیر کونسل ای یو علی رضا سید نے عالمی برادری سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق بحال کروائے۔

یورپی یونین مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق بحال کروائے، علی رضا سید

تسنیم خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق، انسانی حقوق کے عالمی دن کے موقع پر اپنے ایک بیان میں علی رضا سید نے کہاہے کہ دنیا اس دن پر کشمیریوں کو ہر گز فراموش نہ کرے جو گزشتہ ایک سو اٹھائیس دنوں سے بھارتی فوج کے محاصرے میں ہیں اور بھارت نے انہیں ان کے بنیادی شہری حقوق سے بھی محروم کر رکھا ہے۔

 چیئرمین کشمیرکونسل ای یو نے عالمی برادری خصوصاً اقوام متحدہ اور یورپی یونین سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کامحاصرہ ختم کروائیں اور اس مقبوضہ علاقے کے مظلوم عوام کے انسانی حقوق کے تحفظ کے لیے فوری اور سنجیدہ اقدامات کریں۔

علی رضا سید نے اس عالمی دن یعنی دس دسمبر کو ’کشمیریوں کے حقوق کی یاددہانی کادن‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ دنیا کی آزاد قومیں اس موقع پر حق خودارادیت سے محروم اور بھارتی ظلم کی چکی میں پسنے والے مظلوم کشمیریوں کو ہرگز فراموش نہ کریں۔

انہوں نے کہا کہ ہم دنیا کو یاد دلواتے رہیں گے کہ کشمیری کتنے مظلوم ہیں، خاص طور پر یورپ میں مسئلہ کشمیر کے بارے میں ہماری آگاہی مہم اس وقت تک جاری رہے گی جب تک کشمیریوں کو ان کا حق خودارادیت نہیں مل جاتا۔

انہوں نے کہا کہ کشمیری اپنے حق خودارادیت سے سات دہائیوں سے محروم ہیں اور کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں  اورجب سے بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے وہاں کا محاصرہ شروع کیا ہے، کشمیریوں کے لیے مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں، بھارتی محاصرے سے مواصلاتی نظام درہم برہم ہوا ہے، کشمیریوں کا رابطہ رہتی دنیا سے ختم ہوگیا ہے، ان کی صحت، عبادت اور ان کے بچوں کی تعلیم بری طرح متاثر ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ مقبوضہ خطہ پہلے ہی انسانی حقوق کی پامالیوں کا شاہد تھا، لوگوں پراظہار رائے کی پابندی تھی اور ظلم اتنا تھا کہ پرامن مظاہرے کرنے والوں پر براہ راست گولی چلائی جاتی تھی، حتیٰ کہ انہیں پیلٹ گن سے نشانہ بنایا جاتا تھا جس سے کئی لوگ اپنی آنکھوں سے محروم ہوگئے۔

 علی رضا سید نے مزید کہا کہ جنوبی ایشیا میں امن اورخوشحالی مسئلہ کشمیر کے مناسب حل کے بغیر ممکن نہیں۔

پاکستان اور بھارت کے مابین مذاکرات کے بارے میں انہوں نے کہا کہ دوطرفہ مذاکرات کا ابھی تک کوئی فائدہ نہیں ہوا، لہٰذا اب ضروری ہو گیا ہے کہ مسئلہ کشمیر پر بین الاقوامی ثالثی ہونی چاہیے اور کشمیریوں کو بھی مذاکرات کے عمل میں شامل کیا جائے۔

 چیئرمین کشمیر کونسل ای یو نے عالمی طاقتوں بالخصوص امریکا اور یورپی یونین سے مطالبہ کیا کہ بھارت کے ساتھ تعلقات میں کشمیریوں کے انسانی حقوق کے مسائل کو مدنظر رکھیں اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کرنے پر بھارت پر پابندیاں لگائیں۔

انہوں نے مذید کہا کہ بھارت پر دباؤ ڈالا جائے تاکہ وہ کشمیریوں کے حقوق کی پامالی بند کرے اور بغیر تاخیر کشمیریوں کو ان کا حق خودارادیت دے۔

 

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری