امریکی حکام ایرانی نوجوانوں کو اسلامی نظام سے دورکرنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں، امام خامنہ ای

امام خامنہ ای نے تہران میں ایک عظیم اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے فرمایا ہے کہ امریکا سمیت استعماری طاقتیں ایرانی جوانوں کو اسلامی حکومتی نظام سے دور کرنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں۔

امریکی حکام ایرانی نوجوانوں کو اسلامی نظام سے دورکرنے کی ناکام کوشش کررہے ہیں، امام خامنہ ای

تسنیم خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق، تہران میں صوبہ مشرقی آذربائیجان سے آئے ہوئے شہریوں کے عظیم اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے فرمایا:امریکی حکام کی کوشش ہے کہ وہ ایرانی نوجوانوں کو اسلامی جمہوری نظام سے دور کردیں امام خامنہ ای نے فرمایا کہ عوام نے جس طرح سے گیارہ فروی، اسلامی انقلاب کی کامیابی کی سالگرہ کی ریلیوں اور شہید جنرل قاسم سلیمانی کے جلوس جنازہ میں کروڑوں کی تعداد میں شرکت کی تھی اس طرح اکیس فروری کے پارلیمانی انتخابات میں بھی بھرپور شرکت کرکے دشمن کو مایوس کردیں گے ۔

رہبرانقلاب اسلامی نے فرمایا کہ دشمن یہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ اپنی کوششوں، پروپیگنڈوں اور ایرانی عوام پر اقتصادی مشکلات مسلط کرنے، مغربی ملکوں کی جانب سے ایران کے ساتھ ایٹمی معاہدے کی خلاف ورزیوں اور امریکی دباؤ کے بعد ان سب اقدامات کا نتیجہ کیا نکلتا ہے ؟ اور ایرانی عوام پر ان کا کتنا اثر ہوتا ہے ؟

آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای نے اس بات کا ذکرکرتے ہوئے کہ انتخابات ایک عمومی جہاد اور اسلامی نظام و ملک کی آبرو کے ضامن ہیں فرمایا کہ یہ انتخابات ایران کے دشمنوں کے مکر و حیلے کا جواب ہوں گے اور ایرانی عوام جانتے ہیں کہ انہیں کیا کرنا ہے ۔

رہبرانقلاب اسلامی نے امریکی دہشت گردوں کے ہاتھوں جنرل قاسم سلیمانی کی شہادت کا ذکرکرتے ہوئے فرمایا کہ امریکی حکام بغداد ہوائی اڈے پر جنرل قاسم سلیمانی کو شہید کرنے کے بعد بے بس و لاچار ہوگئے ہیں اور خود امریکی صدر اور اس کے اطرف کے لوگ باقا‏عدہ اس نتیجے پر پہنچ گئے ہیں کہ انہوں نے اس مجرمانہ اقدام کے بارے میں غلط اندازہ لگایا تھا ۔

رہبرانقلاب اسلامی نے فرمایا کہ جنرل قاسم سلیمانی کو دہشت گردانہ حملے میں شہید کردئے جانےکے بعد پوری دنیا میں امریکی حکام کی مذمت کی گئی اور خود امریکا کے اندر ان پر شدید حملے کئے گئے اور سوال کیا گیا کہ تم نے یہ کتنی بڑی غلطی کرڈالی کہ جس کا الٹا نتیجہ برآمد ہورہا ہے ؟

رہبرانقلاب اسلامی نے فرمایا کہ امریکی یہ چاہتے تھے کہ جنرل قاسم سلیمانی کو کہ جن کا علاقے میں گہرا اثر و رسوخ تھا شہید کرکے خطے کے حالات پر مسلط ہوجائیں لیکن نتیجہ اس کے برخلاف نکلا اور جس طرح سے بغداد میں لاکھوں کی تعداد میں لوگوں نے جلوس جنازہ میں شرکت کی، شام میں دسیوں ہزار افراد نے شہید قاسم سلیمانی کی یاد میں ریلیاں نکالی اوراس کے بعد حلب اور دیگر علاقوں میں جو تیزی کے ساتھ صورتحال تبدیل ہو رہی ہے وہ سب امریکیوں کے اندازوں کے بالکل برخلاف ہے ۔

رہبرانقلاب اسلامی نے فرمایا کہ آج امریکی حکام جو ہرزہ سرائی کر رہے ہیں وہ ان کی بے بسی اور لاچاری کی علامت ہے اور وہ اپنی ناکامیوں پر پردہ ڈالنے کی کوشش کررہے ہیں۔

 

سب سے زیادہ دیکھی گئی ایران خبریں
اہم ترین ایران خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری