کورونا وائرس سگریٹ نوشی کرنے والوں کے لیے زیادہ خطرناک، ماہرین


کورونا وائرس سگریٹ نوشی کرنے والوں کے لیے زیادہ خطرناک، ماہرین

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سگریٹ نوشی کرنے والے افراد کے لیے زیادہ خطر ناک ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کورونا وائرس سگریٹ نوشی کرنے والوں کے لیے زیادہ خطرناک ہے کیونکہ سگریٹ نوشی ایک ایسی چیز ہے جو انسان کے پھیپھڑوں پر اثر کرتی ہے اور کورونا بھی ایک ایسا ہی وائرس ہے جو سیدھا پھیپھڑوں پر اثر انداز ہوتا ہے۔

ماہرین نے بتایا کہ سگریٹ نوشی کرنے والوں کے پھیپھڑے پہلے ہی کمزور ہوتے ہیں اور ایسے میں اگر اُن کو کورونا کا مرض لاحق ہوجاتا ہے تو اُن کے لیے اِس وائرس سے لڑنا بہت مشکل ہوسکتا ہے۔

ماہرین نے سگریٹ نوشی کرنے والوں کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ جو لوگ سگریٹ نوشی کرتے ہیں اُن کے لیے یہ بہترین موقع ہے کہ وہ اِس جان لیوا چیز کو چھوڑ دیں اور اگر وہ چھوڑ نہیں سکتے ہیں تو اُس وقت تک سگریٹ نوشی سے دور رہیں جب تک یہ وبائی مرض دُنیا سے ختم نہیں ہو جاتا۔

ماہرین نے کہا کہ کچھ لوگ یہ کہتے ہیں کہ ہم صرف دن میں ایک سگریٹ پیتے ہیں یا پھر دو دن کے بعد سگریٹ پیتے ہیں تو ہمارے پھیپھڑے زیادہ متاثر نہیں ہوں گے۔

اُنہوں نے کہا کہ یہ اُن کی غلط فہمی ہے کہ کم سگریٹ پینے سے اُن کے پھیپھڑوں کو نقصان نہیں ہوگا، آپ چاہے کم سگریٹ نوشی کریں یا زیادہ ، اِس سے آپ کے پھیپھڑے ضرور متاثر ہوں گے۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس اب تک دنیا کے 195 ملکوں تک پھیل چکا ہے، اس مہلک وائرس نے دنیا بھر میں اب تک 16 ہزار سے زائد زندگیاں نگل لی ہیں، دنیا بھر میں تین لاکھ 75 ہزار افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں جبکہ ایک لاکھ سے زیادہ صحت یاب ہوچکے ہیں۔

 

سب سے زیادہ دیکھی گئی دنیا خبریں
اہم ترین دنیا خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری