طیارہ حادثہ، 2 مسافر معجزانہ طور پر محفوظ

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان کے سب سے بڑے شہرکراچی میں حادثے کا شکار ہونے والے طیارے کے 2 مسافر معجزانہ طور پر محفوظ رہے۔

طیارہ حادثہ، 2 مسافر معجزانہ طور پر محفوظ

تسنیم خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق،  کراچی ایئرپورٹ کے قریب گر کر تباہ ہونے والے طیارے کے 97 افراد جاں‌ بحق ہوگئے ہیں، وزیر اعظم نے طیارہ حادثے کی فوری تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی ایئرپورٹ کےقریب جناح گارڈن میں پی آئی اے کا طیارہ گر کر تباہ ہو گیا جس کے نتیجے میں‌ 97 افراد جاں ‌بحق ہو گئے.

 پی آئی اے کی پرواز پی کے 8303 لاہور سے کراچی آ رہی تھی، طیارہ گرنے پر سول ایوی ایشن کی جانب سے ایمرجنسی نافذ کی گئی جب کہ سول ایوی ایشن، ریسکیو اور پولیس کی ٹیموں نے ریسکیو آپریشن میں حصہ لیا۔

طیارہ گرتے ہی ہولناک آگ لگ گئی اور پورے علاقے میں دھواں ہی دھواں پھیل گیا ہے، طیارہ گرنے کے مقام پر گھروں کو نقصان پہنچا اور گاڑیاں بھی تباہ ہوگئیں۔ 97 میں سے 19 افراد کی شناخت کی جا چکی ہے، جناح اسپتال میں 66، سول اسپتال میں 31 میتیں لائی گئیں۔

اطلاعات کے مطابق طیارہ خالی مقام پر گرا، طیارہ ایئر بس 320 میں 100سے زائد مسافر موجود تھے ، کپتان نے کنٹرول ٹاورکو طیارے کے لینڈنگ گیئرمیں خرابی کی اطلاع دی اور کپتان کو گائیڈ لائن دینے کےدوران طیارہ ریڈار سے غائب ہوا۔

پی آئی اے کے آپریشنل ملازمین کو ڈیوٹی پر طلب کر لیا گیا ہے،سی ای او پی آئی اےایئرمارشل ارشد ملک کا ناگہانی حادثے پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔

ترجمان پی آئی اےجبکہ سول ایوی ایشن کا کہنا ہے کہ پی آئی اے کےطیارے میں 99مسافر اور 8 کریو ممبر سوار تھے۔

ڈی آئی جی نعمان صدیقی کا کہنا تھا کہ طیارہ گرنے سے زمین پر 4 گھر تباہ ہوئے ہیں، طیارہ گرنے کی جگہ کا گھیراؤ کر کے مکمل سیل کیا گیا۔

ترجمان پی آئی اے کا کہنا ہے کہ طیارے کا 2بجکر37منٹ پر ایئرکنٹرولر سےرابطہ منقطع ہوا، حادثہ لینڈنگ سے چند لمحے پہلے ہوا ،تحقیقات جاری ہیں، طیارے میں فنی خرابی سے متعلق قیاس آرائیاں ہیں، طیارہ حادثہ متاثرین سے فوری رابطے کیلئے کام شروع کردیاگیا۔

ایئر بس 320کے پائلٹ سجاد گل اور فرسٹ آفیسر عثمان اعظم تھے جبکہ کریو ممبر میں فرید احمد چوہدری، عبدالقیوم اشرف ، عصمہ شہزادی ،مدیحہ ارم، آمنہ عرفان ،ملک عرفان عملےمیں شامل تھے۔

طیارہ حادثے سے چند لمحہ قبل کپتان کی کنٹرول ٹاور سے گفتگو سامنے آگئی،کنٹرول ٹاور کے نمائندے نے کپتان کو آگاہی دی کہ رن وے تیار ہے،جس پر کپتان نے کہا مےڈے مے ڈے، طیارے کا انجن فیل ہوگیا ہے ، بیلی لینڈنگ کراؤں گا۔

وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے طیارہ گرنے پر دکھ کا اظہارکرتے ہوئے کمشنر کراچی اورڈی آئی جی کو فون کرکے علاقے میں فوری پہنچنے کےاحکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔

گورنرسندھ عمران اسماعیل نے پی آئی اے کا طیارہ گرنے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا چیئر مین پی آئی اے کو ٹیلیفون کرکے حادثہ کی پورٹ طلب کرلی ہے اور چیئرمین این ڈی ایم اے کو جائے حادثہ پر امدادی کارروائی کی ہدایت کردی ہے۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پی آئی اے طیارہ حادثے پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا مشکل کی اس گھڑی میں جاں بحق ہونیوالےمسافروں کےاہلخانہ کیساتھ ہیں جبکہ امدادی کاموں کیلئے سول انتظامیہ سےبھرتعاون کی ہدایت کردی ہے۔

وزیراعظم عمران خان اورصدر عارف علوی نے کراچی میں طیارہ حادثے پر اظہار افسوس کیا ، وزیراعظم نے امدادی سرگرمیوں کو مزید تیز کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے طیارہ حادثے کی فوری تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری